Category Archives: Urdu

‫پیکنگ یونیورسٹی نے گوانگہوا اسکول آف مینجمنٹ کی زیر قیادت “بیلٹ اینڈ روڈ انسٹیٹیوٹ” کا افتتاح کردیا

بیجنگ، 24 اپریل 2018ء/پی آرنیوزوائر/– چین کے قومی بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے (بی آر آئی) کی مدد میں پیکنگ یونیورسٹی نے جمعہ 20 اپریل 2018ء کو ایک تقریب میں اپنے نئے بیلٹ اینڈ روڈ انسٹیٹیوٹ کا افتتاح کردیا۔ انسٹیٹیوٹ کی قیادت یونیورسٹی کے سرفہرست گوانگہوا اسکول آف مینیجمنٹ کے پاس ہوگی۔

انسٹیٹیوٹ کے لیے وسیع تعاون کا مظاہرہ کرتے ہوئے افتتاحی تقریب میں چینگ جیانبینگ، نائب چیئرمین قومی کمیٹی چینی عوامی سیاسی مشاورتی کانفرنس؛ چاؤ آئی، ڈائریکٹر دفتر امور عامہ اسٹیرنگ گروپ برائے بیلٹ اینڈ روڈ منصوبہ؛ وانگ ڈنگہوا، ڈائریکٹر وزارت تعلیم کا محکمہ تعلیم اساتذہ؛ پیکنگ یونیورسٹی کے کلیدی منتظمین؛ اور دنیا بھر سے حکومتی نمائندگان اور کاروباری شخصیات نے شرکت کی۔

بی آر آئی کا اعلان 2013ء میں چین کی قدیم شاہراہ ریشم کے راستوں پر واقع ممالک کی اقتصادی ترقی کے ایک طریقے کے طور پر ہوا تھا، جس میں ایشیا، شمالی و مشرقی افریقہ اور یورپ کے ممالک شامل ہیں۔ بیلٹ اینڈ روڈ انسٹیٹیوٹ کی افتتاحی تقریب کے دوران پیکنک یونیورسٹی کے نائب صدر وانگ بو نے ادارے کی تخلیق کے تناظر میں چین کے بڑھتے ہوئے بین الاقوامی کردار کو تسلیم کیا۔ “چالیس سال قبل اصلاحات اور دنیا کے سامنے کھلنے کے بعد چین کی ترقی ایک نئے عہد میں داخل ہو چکی ہے۔ چین فی الحقیقت دنیا بھر سے منسلک ہو چکا ہے۔”

ادارہ بی آر آئی متعلقہ ممالک میں مستقبل کے رہنماؤں کے لیے تعلیمی مواقع فراہم کرے گا، بی آر آئی منصوبوں کے حوالے سے تحقیق کرے گا اور عوامی سطح پر تبادلے کے لیے ایک پلیٹ فارم پیش کرے گا۔ ان اہداف کے حصول میں پی کے یو گوانگہوا کے عالمی سطح پر تسلیم شدہ کاروباری ماہرین اور تعلیمی ذرائع کے درمیان بین الشعبہ جاتی تعاون شامل ہوگا جو پیکنگ یونیورسٹی کے دیگر عالمی معیار کے کلیہ جات کے ذریعے دستیاب ہوگا۔

طلبہ کے داخلے کے لیے آئندہ منصوبوں کا خاکہ بناتے ہوئے پی کے یو گوانگہوا ڈین لیو چیاؤ نے کہا کہ “2018ء میں ہم بی آر آئی کے ممالک سے مضبوط قائدانہ مہارت اور عالمی وژن رکھنے والے پرعزم اور ذہین افراد کے داخلے کا آغاز کریں گے۔” آنے والے طلبہ ابتدائی طور پر پی کے یو گوانگہوا کے انڈرگریجویٹ منصوبے، بین الاقوامی ایم بی اے اور ای ایم بی اے پروگراموں اور بغیر ڈگری کے عالمی ایگزیکٹو تعلیمی پروگراموں کے لیے درخواست دے سکتے ہیں۔ اضافی پروگرام آئندہ سالوں میں شامل کیے جائیں گے۔

پی کے یو گوانگہوا انسٹیٹیوٹ کے ہدف کی حمایت کے لیے شراکت داروں کی تلاش شروع کرچکا ہے۔ شراکت داروں کی فراہم کردہ مالیاتی مدد انسٹیٹیوٹ کو نصاب ترتیب دینے اور اپنے پروگراموں میں قبول کیے گئے طلبہ کے لیے مکمل اسکالرشپس کی فراہمی کی اجازت دیں گے۔ بیلٹ اینڈ روڈ انسٹیٹیوٹ کے ساتھ شراکت داری کے خواہشمند افراد مواقع کے بارے میں جاننے کے لیے پی کے یو گوانگہوا سے رابطہ کر سکتے ہیں۔ ادارے کے کسی پروگرام میں درخواست دینے میں دلچسپی رکھنے والے طلبہ deans@gsm.pku.edu.cn پر ای میل کر سکتے ہیں۔

‫د پیکینګ پوهنتون دد ګوانګوا اسکول آف منجمنټ پر مشري کي “بیلټ او روډ انسټیټیوټ” پیل کوي

بيحنګ, ۲۳ اپريل ۲۰۱۸/پي آر نيوزواېر/– د چین د ملي بیلټ او سړک د نوښت )بي آر آئي( په ملاتړ، پیکیګ پوهنتون د جمعې، ۲۰ اپريل ۲۰۱۸ د یوې نوې غونډې په ترڅ کې د نوي بیلټ او روډ انسټیټیوټ اعلان کړی. دا اسنټي ټيوټ به د پوهنتون د اعلي پايه ګنوانګوا اسکول آف منيجمنټ په مشري کي کار کوي۔

د انسټیټیوټ لپاره پراخ ملاتړ څرګندول، د دې مراسمو په مراسمو کې د چین د خلکو د سیاسي مشورتي کنفرانس د ملي کمیټې مرستیال، زينګ جيابينګ ؛ زاو اي ، د بلټ او سړک د نوښت لپاره د روزنې ډلې دفتر عمومي رییس. وانګ ډيګوا ، د ښوونې او روزنې وزارت د ښوونکي د روزنې ریس؛ د پیکنګ پوهنتون مهم مدیران؛ او د نړۍ استازو د حکومت استازو او سوداګریزو اجراییوي ادارو د انسټیټیوټ لپاره پراخ ملاتړ څرګندولی۔

د بریښنا شرکت د ۲۰۱۳ کال په جریان کې اعلان وکړ چې د چین د لرغونو ورېښمو د سړک سوداګريز لارو، په ګډون آسیا، شمالي او ختیځ افريقا او اروپا کې د هیوادونو په هیوادونو کې اقتصادي پرمختګ پرمخ بوځي. د بیلټ او روډ انسټیټیوټ د پرانیستنې مراسمو په ترڅ کې د پیکیک پوهنتون مرستیال وانګ بو د انسټیټیوټ د جوړولو لپاره د شرایطو په توګه د چین د مخ پر ودې نړیوالو رول تصدیق کړ: “د چین پرمختګ له تیرو څلویښتو کلونو راهیسې نوي پړاو پیل کړ. په نړۍ کې د نورو نړۍ سره تړل شوي. ”

انسټیټیوټ به د بریتانیا په اړوندو هیوادونو کې د راتلونکو مشرانو لپاره تعلیمي فرصتونه چمتو کړي، د بریښنا شرکتونو پروژو سره څیړنې ترسره کړي، او د خلکو لپاره د تبادلې لپاره یو پلیټریټ په توګه خدمت وکړي. د دې اهدافو سره سم به د بین المللي پیژندل شوي پیرویو ګوانګوا د نړیوال پیژندل شوي کاروباري متخصصین او د پیکین پوهنتون د نورو نړیوالو پوهنځیو له لارې د اکادمیک سرچینو تر منځ د انډول ډیپلوماسۍ همغږي شامل وي.

د زده کونکو د استخدام لپاره راتلونکی پالنونه روښانه کول، پي کے يو گوهودان ډی ژی ژو سره شریک کړل “په ۲۰۱۸ کې، موږ به د بیړنیو او روښانه اشخاصو استخدام پیل کړو چې د بریښنا پورې تړلو هیوادونو څخه قوي مشرتابه مهارتونه او نړیوال لید سره.” راتلونکی محصلین په پیل کې د پي کے يو ګیګاهوا فارغ التحصیل پروګرام، نړیوال ايم بي اے او اي ايم بي اے پروګرامونو لپاره، او د نړیوال اجرائیوي نړیوالو تعلیمي پروګرامونو لپاره درخواست کولی شي. اضافي پروګرامونه به په راتلونکو کلونو کې اضافه شي.

پي کے يو گوهواوا د انسټیټیوټ د ماموریت د ملاتړ لپاره د همکارانو په لټه کې پیل کړی دی. د ملګریانو لخوا چمتو شوي مالي ملاتړ به انسټیټیوت ته اجازه ورکړي ترڅو خپل نصاب رامینځ ته کړي او د زده کوونکو لپاره د منلو وړ زده کونکو لپاره بشپړ بورسونه چمتو کړي. هغه شرکتونه یا اشخاص چې د بیلټس او سړک د انستیتیوت سره ملګرتیا کې لیوالتیا لري کولی شي د پیرو یو گوهوا سره اړیکه ونیسي ترڅو د فرصتونو په اړه زده کړه وکړي. هغه زده کونکي چې د انسټیټیوټ له پروګرامونو څخه د غوښتن لیک لیوالتیا لري deans@gsm.pku.edu.cn ته بریښناليک ورکوي.

‫لی جن یوان: “دنیا کی توجہ اب چین پر۔ ٹیئنز آ گیا ہے!”

بیجنگ، چین، 16 اپریل 2018ء/سنہوا-ایشیانیٹ/– چین کا نامی گرامی بین الاقوامی اقتصادی اجلاس دی باؤ فورم برائے ایشیا سالانہ کانفرنس 2018ء 11 اپریل کو باضابطہ طور پر اختتام کو پہنچا۔ “زیادہ ترقی یافتہ دنیا کے لیے ایک کھلا اور جدت طراز ایشیا” کے موضوع پر چیئرمین ٹیئنز گروپ لی جن یوان کو فورم میں شرکت کی دعوت دی گئی تھی، جہاں لی نے کہا کہ ایسے وقت میں جب عالمی معیشت کی نظریں چین پر ہیں، اور چین بھی دنیا پر نظریں جمائے بیٹھا ہے۔ بیلٹ اینڈ روڈ منصوبہ ادارے کو ایک کھلے پلیٹ فارم تک لے آیا ہے تاکہ وہ چین پر ارتکاز کے لیے تمام صنعتوں کی توجہ حاصل کرے۔

لی جن یوان نے کہا کہ ہائنان کی مثال لے لیں، “اگر ہائنان ماحولیاتی تحفظ اور صحت کی سیاحت کا منصوبہ حاصل کر سکے، تو ہائنان مستقبل میں معجزات رونما کر سکتا ہے۔ ٹیئنز کسی بھی موقع کے لیے ہمیشہ تیار رہتا ہے اور یہ اس کی تیاری کو تیز تر کرنے کے رحجان کا بھی فائدہ اٹھائے گا۔” ٹیئنز عرصہ دراز سے عالمگیریت کی صف اول میں ہے۔ اس کا سالوں پر محیط مجموعی تجربہ اداروں کی طویل المیعاد عالمی ترقی پر اثر انداز ہوگا۔” اس منصوبے کے جواب میں ہم اداروں کی حوصلہ افزائی کر رہے ہیں کہ وہ عالمی سطح پر جانے کے لیے موقع کا فائدہ اٹھائیں۔ یہ عملی طور پر دنیا کا سامنا کرنے کا بہترین طریقہ ہے۔”

لی جن یوان نے کہا کہ “ٹیئنز ایک بین الاقوامی ادارہ ہے اور بیلٹ اینڈ روڈ منصوبہ ٹیئنز کی عالمگیریت کا آغاز کرنے کے لیے ایک انجن کی طرح ہے۔”

لی جن یوان نے “صرف دعوت نامے پر” ہونے والے ذیلی فورمز میں ایک غیر معمولی کاروباری منتظم کی حیثیت سے باؤ فورم برائے ایشیا 2018ء میں شرکت کی: 9 اپریل کو انہوں نے 21 ویں صدی میری ٹائم سلک روڈ آئی لینڈ اکانمی کوآپریشن، آسیان-چین گورنرز/میئرز راؤنڈ ٹیبل اور دنیا کے سرفہرست کاروباری رہنماؤں کے ساتھ کاروباری منتظم اور کاروباری انتظام کی از سر نو تعریف کرنے کے سیشنز میں شرکت کی۔ لی 10 اپریل کو چینی وفد کے لیے منتخب کیے گئے دس کاروباری منتظمین میں سے ایک کی حیثیت سے جاپان-چین سی ای او ڈائیلاگ میں بھی مدعو تھے۔ لی نے ٹیئنز کی عالمی حکمت عملی اور بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے سے پائے گئے کامیاب تجربات کے بارے میں بتایا جو ٹیئنز نے حاصل کیے۔

پین ہائپنگ، معروف ابلاغی شخصیت اور ڈپٹی جنرل مینیجر آفس آف جنرل مینیجر، سنہوا نیوز ایجنسی نے کہا کہ باؤ فورم برائے ایشیا سالانہ کانفرنس 2018ء کی افتتاحی تقریب نے ظاہر کیا کہ بیلٹ اینڈ روڈ منصوبہ نکلا تو چین سے ہے لیکن اس سے پیدا ہونے والے مواقع اور کامیابیاں دنیا بھر کے لیے ہیں۔

پین ہائپنگ مانتے ہیں کہ بین الاقوامی مارکیٹ میں گہری شمولیت رکھنے والے چینی برانڈ کی حیثیت سے ٹیئنز گروپ چین کے “عالمی سطح پر جانے والے” اداروں میں سے ایک کی نمائندگی کرتا ہے۔ ٹیئنز گروپ 1995ء میں قائم کیا گیا تھا اور یہ 1997ء میں بین الاقوامی مارکیٹ میں گیا۔ بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے کو متعارف کروائے جانے کے بعد ٹیئنز گروپ نے فوری طور پر ردعمل دکھایا اور 37 ممالک اور خطوں میں نئی مارکیٹیں کھولیں جن میں امریکا، آسٹریلیا، فرانس، اٹلی، اسپین، جنوبی کوریا، متحدہ عرب امارات اور فلپائنز شامل تھے۔ اس وقت ٹیئنز نے اپنے کاروبار کو دنیا کے 190 سے زیادہ ممالک اور خطوں تک پھیلا دیا ہے، 110 ممالک اور خطوں میں شاخیں قائم کردی ہے اور دنیا کے بیشتر ممالک میں غیر معمولی اداروں کے ساتھ تزویراتی اتحاد تشکیل دے چکا ہے۔ ٹیئنز نے چینی اداروں کے لیے کامیابی سے “عالمی سطح پر جانے” کے لیے ایک معیار مرتب کردیا ہے۔

کانفرنس کے موضوع اور روح کے مطابق کوئی سیاؤلن، ہیڈ ایڈیٹر ہفتہ وار چائنا اکنامک، پیپلز ڈیلی نے کہا کہ باؤ فورم برائے ایشیا سالانہ کانفرنس 2018ء چین کی میزبانی میں ہونے والی سال کی پہلی سفارتی سرگرمی ہے اور چینی رہنما اسے بہت اہمیت دیتے ہیں۔ یہ ایک نیا نقطہ آغاز ہے کیونکہ کئی ممالک کے سربراہان اور عالمی کاروباری رہنما بھی شرکاء میں پچھلے سالوں سے کہیں بڑی تعداد میں شریک ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ ایشیا کے نقطہ نگاہ سے چین پورے ایشیا کی جانب سے دنیا کا سامنا کر رہا ہے اور اس نئے عہد میں نئی بلندیوں کو پا چکا ہے۔

کوئی سیاؤلن مانتی ہیں کہ چین دنیا کا اقتصادی رہنما بن چکا ہے، خاص طور پر بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے کے ساتھ۔ چین نے اس راستے پر موجود ممالک کی ترقی کی قیادت کی، جس نے چین کی معیشت کو زبردست ترقی میں مدد دی۔ انہوں نے زور دیا کہ بیلٹ اینڈ روڈ منصوبہ صرف کاروباری مواقع کی تلاش کے لیے ہی نہیں بلکہ عالمی اکھاڑے میں چینی اداروں کے قدم رکھنے کے لیے نمائندگی کا بھی ہدف رکھتا ہے، جو دنیا کو چین کی شراکت داری دیکھنے کی اجازت دیتا ہے۔ بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے میں ٹیئنز کی شراکت داری اس کا ایک اور اشارہ ہے۔

ذریعہ: ٹیئنز گروپ

تصویری اٹیچمنٹ کے لنکس:
http://asianetnews.net/view-attachment?attach-id=310274

‫گری کا اے آئی ملٹی وی آر ایف یونٹ جی ایم وی 6، کینٹن میلے میں ایک زبردست کامیابی

گوانگچو، چین، 16 اپریل 2018ء/سنہوا-ایشیانیٹ/– 16 اپریل کو گری الیکٹرک اپلائنسز انکارپوریٹڈ چوہائی نے چائنا امپورٹ اینڈ ایکسپورٹ فیئر (“کینٹن میلے”) میں اے آئی ملٹی وی آر ایف (ویری ایبل ریفریجرنٹ فلو) یونٹ جی ایم وی 6 کی نمائش کی، جس نے گزشتہ ہفتے بیجنگ ریفریجریشن نمائش میں اپنا عالمی آغاز لیا تھا۔

کینٹن میلے میں تشہیر کے دوران جناب اویانگ جون، نائب جنرل مینیجر گری اوورسیز سیلز کمپنی نے تعارف کروایا کہ اے آئی ٹیکنالوجی کے زبردست ملاپ کے ذریعے جی ایم وی 6 متعدد خصوصیات رکھتا ہے جیسا کہ اسٹینڈبائی رہتے ہوئے بجلی کی کم کھپت، خود مطابقت اختیار کرنا، خود تشخیص اور دیگر۔

اسٹینڈبائی پر کم بجلی خرچ کرنا، بجلی کی بچت اور ماحول دوست

عام طور پر کہا جاتا ہے کہ چلنے کے علاوہ ایئر کنڈیشنر اپنے بیشتر وقت میں اسٹینڈ بائی میں ہوتا ہے۔ البتہ کمپریسر کے آغاز کا معیار برقرار رکھنے کے لیے روایتی ملٹی وی آر ایف یونٹس کو ضرورت ہوتی ہے برقی ہیٹنگ بیلٹ کے ساتھ گرمائش کی گنجائش برقرار رکھنے کی، تاکہ مائع ریفریجرنٹ داخل نہ ہو سکے، جو چکنا کرنے والے مادّے کو متاثر کر سکتا ہے۔ یوں ایسے یونٹس اضافی اسٹینڈ بائی بجلی کھپاتے ہیں، جو اوسطاً 40 واٹ ہوتی ہے۔

گری کی جدید جی-ڈبلیو ایف سی ٹیکنالوجی موسم کی پیشن گوئی پر انحصار کرتی ہے اور کمپریسر ریفریجرنٹ ٹرانسفر کی پہلے سے طے شدہ کنٹرول حکمت عملی کے ساتھ جی ایم وی 6 آئندہ موسم اور درجہ حرارت کے تبدیلی کے رحجان کی پیش بینی کرتا، یوں کمپریسر تیل کے درجہ حرارت کو گرم رکھنے والی بیلٹ کو کنٹرول کو قابل بناتا اور الیکٹرک ہیٹنگ کے لیے ابتدائی وقت کو 80 فیصد تک کم کرتا ہے۔ اسٹینڈبائی اسٹیٹس میں آؤٹ ڈور یونٹ کی بجلی کھپت کم ہوتے ہوئے 1 واٹ تک ہو جاتی ہے۔

مختلف مقامات پر خود مطابقت، ایک “زیادہ اسمارٹ” ایئر کنڈیشنر

مختلف خطّوں اور مقامات پر ایک ہی یونٹ کے لیے صارفین کا تجربہ ہمیشہ یکساں نہیں ہوتا۔ روایتی یونٹوں میں نصب شدہ پروگرام پیچیدہ ماحول اور زیادہ ہنگامی ضروریات رکھنے والے خطّوں میں مختلف ضروریات کو پورا کرنے میں ناکام ہو جاتے ہیں۔ اس مرتبہ جی ایم وی 6 کامیابی سے بنیادی مسائل سے نمٹتا ہے۔

مختلف مقامات پر خود مطابقت رکھنے والی ٹیکنالوجی کے ساتھ جی ایم وی 6 جی پی ایس کے ذریعے یونٹ کی بلندی کا پتہ لگا سکتا ہے اور ماحولیاتی دباؤ اور ہوائی کے بہاؤ کو خود کار طور پر قابو کرکے دونوں کی مدد سے بہتر صارفی تجربے اور موثر کام کرنے کو یقینی بناتا ہے۔

جہاں تک بات زیادہ بلند علاقوں میں ہیٹنگ موڈ کے اندر سست ڈی فروسٹنگ کے ایئر کنڈیشننگ مسئلے کی ہے تو جی ایم وی 6 مختلف درجہ حرارت اور ہوا میں نمی کے تناسب کے مطابق کمپریشن کے لیے بہترین آپریشن فریکوئنسی حاصل کر سکتا ہے، موسمیاتی خصوصیات کے ساتھ مختلف ڈی فروسٹنگ موڈز بنا سکتا ہے، یوں خود مطابقت اور انٹیلی جینٹ کسٹم ڈی فروسٹنگ موڈ کا اندازہ لگا کر صارفین کے لیے زیادہ آرام دہ تجربہ فراہم کرتا ہے۔

خود تشخیص بطور حفظ ما تقدم

روایتی ایئر کنڈیشنرز کے لیے کسی بھی چھپے ہوئے مسئلے  کے بارے میں بتانا اور پیشگی طور پر ان خرابیوں کا خاتمہ کرنا ممکن ہی نہیں۔ خود پیش بینی اور خود تشخیصی ٹیکنالوجی کے ساتھ گری اے آئی ملٹی وی آر ایف یونٹ ایئر کنڈیشنر کی کام کرنے کی حالت کی بروقت تشخیص، کمپریسر کے بنیادی کاموں کا تجزیہ کرنے، کام کرنے کی موجودہ مقدار اور غلطیوں کو ٹھیک کرنے کے ڈیٹا سے مسلسل سیکھنے، یونٹ آپریشن خصوصیات اور خامیوں کے درمیان تعلق کو قائم کرنے اور پھر غلطی کی تشخیص اور پیش بینی کی طرف جانے کا کام کرتا ہے۔

اس اسمارٹ یونٹ کے حق میں رائے کا اظہار کرتے ہوئے کہ جو بجلی کی بچت میں بہت مدد دیتا ہے، گری کے خصوصی ایجنٹ برائے مشرق وسطیٰ بیسک الیکٹرونکس کمپنی لمیٹڈ کے ڈپٹی سی ای او انجینئر حامد نے تشہیری تقریب میں کہا کہ “بجلی کی معلومات کا تنوع اور فہم وہ چیز ہے جو ہم طویل عرصے سے چاہتے تھے۔ مجھے خوشی ہے کہ گری دنیا کو وہ اے آئی انقلاب پیش کر رہا ہے جس کا طویل عرصے سے انتظار کیا جا رہا تھا۔”

عالمگیریت کے پس منظر میں ہر شعبہ مشترکہ کوششوں سے ترقی پا رہا ہے اور ساخت گری کی صنعت کی تیز تر ترقی دنیا بھر میں لوگوں کو ایک شاندار زندگی فراہم کرنے جا رہی ہے۔ گری اے آئی ملٹی وی آر ایف یونٹ کی کینٹن میلے میں تشہیر دنیا بھر کے لیے ایئر کنڈیشننگ کے شعبے میں اے آئی کی ٹیکنالوجیکل کامیابیوں کو مزید آگے پیش کرتی ہے۔

ذریعہ: گری الیکٹرک اپلائنسز انکارپوریٹڈ چوہائی

استضاف مضمار ميدان للسباق، يوم السبت، واحدًا من أكبر الفعاليات في المنطقة، كأس دبي العالمي. حيث تابع وحضر أكثر من 60 ألف شخص من جميع أنحاء العالم مراسم الافتتاح والختام، وهي المراسم التقي قامت شركة 45 DEGREES بتصميمها وانتاجها حصريًا لهذا الحدث وهذه الرياضة الشعبية. وقالت ياسمين خليل، رئيسة شركة 45 DEGREES: “نشعر بالفخر لوقوع الاختيار علينا لتصميم وتنفيذ مراسم هذا الحدث المرموق. لقد كان شرفًا عظيمًا للعمل جنبًا إلى جنب مع اللجنة المنظمة لكأس دبي العالمي، الذي يواصل في كل عام رفع مستوى معاييره عن العام الأسبق. وبوصفنا شركة مبتكرة فإن هذا التحدي هو ما يدفعنا لتقديم عرض يتجاوز التوقعات، ويترك الجماهير في حالة من الإبهار والإلهام، مع انطباع سيدوم طويلًا”.

استضاف مضمار ميدان للسباق، يوم السبت، واحدًا من أكبر الفعاليات في المنطقة، كأس دبي العالمي. حيث تابع وحضر أكثر من 60 ألف شخص من جميع أنحاء العالم مراسم الافتتاح والختام، وهي المراسم التقي قامت شركة 45 DEGREES بتصميمها وانتاجها حصريًا …

کیروئی پٹرولیم نے برازیل میں سب سے بڑا یو پی جی این منصوبہ حاصل کرلیا

بیجنگ، 9 اپریل 2018ء/پی آرنیوزوائر/– چند روز قبل شانڈونگ کیروئی پٹرولیم ایکوئپمنٹ لمیٹڈ (جسے آگے “کیروئی پٹرولیم” لکھا جائے گا) کی زیر قیادت ایس پی ای نے برازیلین پٹرولیم کارپوریشن (جسے یہاں پٹروبراس لکھا جائے گا) کے ساتھ ریاست ریو کے شہر اتابورائی میں گیس پروسیسنگ پلانٹ کے لیے 600 ملین امریکی ڈالرز کے (یو پی جی این) منصوبے پر دستخط کردیے۔ یہ 2014ء کے بعد پیٹروبراس کا پہلا عوامی نیلامی تیل منصوبہ اور برازیل میں قدرتی گیس کو صاف کرنے کا اب تک کا سب سے  بڑا منصوبہ ہے۔ یہ پیٹروبراس پری-سالٹ کے لیے تیل و گیس میں پیشرفت میں بہت اہمیت رکھتا ہے۔ کیروئی پیٹرولیم تیل کی انجینیئرنگ کے شعبے میں پیٹروبراس کا کوئی منصوبہ حاصل کرنے والا چین کا پہلا اور واحد نجی ادارہ بن چکا ہے۔ اس نے چینی اداروں کے لیے ایک مثال قائم کردی ہے کہ جس کی پیروی کرتے ہوئے وہ سمندر پار جائیں اور چین کی نمائندگی کرتے ہوئے علم و تجربے کا سنہرا کارڈ تخلیق کریں۔

برازیل کے لیے چینی سفیر لی جنچانگ نے کہا کہ “ہم برازیل اتابورائی نیچرل گیس ٹریٹمنٹ پلانٹ (یو پی جی این) منصوبے کے لیے کامیاب بولی پر کیروئی پٹرولیم کو گرمجوشی سے مبارک باد دیتے ہیں، جو کیروئی کے بلند حوصلوں اور برازیل میں زبردست کوششوں کا اظہار کرتا ہے اور برازیل میں چین کے داخلے کی اہم کامیابیوں کی نمائندگی کرتا ہے۔ ہمیں امید ہے کہ کیروئی اپنے درجہ اول کے ڈیزائن اور تعمیرات کے ذریعے مقامی معاشی و سماجی ترقی کو آسان بنا کر پٹرولیم چین-برازیل تیل و گیس تعاون کے منصوبوں کے لیے ایک معیار مرتب کرے گا۔

برازیلی انجینیئرنگ کمپنی میتودو پوتینشل نے مقامی مارکیٹ کی ترقی کو ترویج دینے اور منصوبوں کو سہارا دینے کے لیے پیٹروبراس کے لیے گزشتہ تین دہائیوں میں تقریباً ایک سو منصوبے کامیابی سے فراہم کیے ہیں۔ اس نے کیروئی پٹرولیم کے ساتھ ایک مشترکہ منصوبہ تشکیل دیا ہے جو اس منصوبے میں کلیدی کردار ادا کرتا ہے۔ پیٹروبراس کے منصوبے پر بولی لگانے کی دستاویزات باضابطہ طور  پر ملنے کے بعد، جنوری 2017ء سے کیروئی بہترین تجویز نامہ تیار کرنے کے لیے 9 مہینے تیاری کرتا رہا۔ بالآخر کیروئی پٹرولیم ماڈیولر اور معیاری ڈیزائن کے مختلف فائدوں، کم عملیاتی اخراجات اور منصوبے سے کمانے کے بہتر طریقوں کے ساتھ دنیا بھر کے معروف انجینیئرنگ اداروں میں نمایاں رہا۔

قدرتی گیس صاف کرنے کا منصوبہ، جو کیروئی نے حاصل کیا، برازیل میں قدرتی گیس صاف کرنے کا سب سے بڑا کارخانہ ہوگا۔ یہ ریو کی ریاستی حکومت کو 2,000 سے زیادہ مقامی ملازمتیں فراہم کرکے بے روزگاری کے مسئلے سے نمٹنے میں مدد دے گا۔ یہ کارخانہ بنیادی طور پر سانتوس طاس میں پری-سالٹ تیل کو بنانے کے عمل میں متعلقہ گیس کی پیداوار کا کام کرتا ہے، جو برازیل میں پری-سالٹ تیل کی عام پیداوار کی مضبوط ضمانت فراہم کرتا ہے اور پری-سالٹ تیل میں اضافے اور بڑھتی ہوئی پیداوار میں بہت اہمیت رکھتا ہے۔ کارخانے کی تکمیل قدرتی گیس  کی نقل و حمل اور پروسیسنگ کو 23 ملین مکعب میٹر سے 44 ملین مکعب میٹر روزانہ تک بڑھا چکی ہے۔ مزید برآں پروسیس شدہ قدرتی گیس گاڑیوں کے لیے اور صنعتی شعبے میں استعمال ہوگی، جو برازیل کی حکومت پر سے قدرتی گیس درآمد کرنے کے دباؤ کو کم کرے گی۔

کیروئی پٹرولیم نے اپنی کوششوں کے ذریعے چین اور برازیل کے درمیان دوستی کو فروغ دیا اور ایک مستحکم چینی ادارے کی قدری زنجیر کو دنیا کے لیے پھیلا دیا ہے۔ یہ تیل و گیس کے شعبے میں بیرون ملک جانے والی صنعتوں کا نمائندہ ہے جو بیرون ملک جا رہا ہے، خطرے مول لے رہا ہے، شفاف کردار ادا کر رہا ہے اور امریکی براعظم پر چین کی مثبت ساکھ قائم کر رہا ہے۔