115 واں کینٹن میلہ: بہترین جدت طرازی اور خدمت تجارت کے مستقبل کو ظاہر کرتی ہوئی

گوانگ چو، چین، 21 جولائی 2014ء/پی آرنیوزوائر — گوکہ چین کی قومی ٹیم برازیل میں ہونے والے فیفا ورلڈ کپ تک نہیں پہنچی، لیکن چینی اشیاء ایسا کرنے میں ضرور کامیاب ہوئیں۔ چی جیانگ صوبے کی محض ایک پرچم بنانےوالی کمپنی نے برازیل میں 50 ملین جھنڈے فراہم کیے، جس کے بیشتر آرڈر چین کے سب سے بڑے تجارتی میلے کینٹن میلے کے ذریعے کیے گئے۔

5 مئی کو ختم ہونے والا چین کا 115 واں کینٹن میلہ تجارتی مسابقت کو بہتر بنانے کے لیے اپنے عہد کو بہتر بنایا۔ گو کہ 114 ویں میلے کے مقابلے میں کاروباری سودوں کی مجموعی قدر کچھ کم رہی جو 191 ارب رین منبی (امریکی ڈالرز 31 ارب) تھی، لیکن انفرادی اعدادوشمار نے ثابت کیا کہ میلے کے منتظمین کی جانب سے تخلیقی صلاحیت، معیار اور برانڈ تسلیم شدگی کی کوششیں بہت کامیاب ثابت ہوئیں۔

کئی جدت طراز چینی اداروں، جیسا کہ گھریلو مصنوعات اور صارفین کے لیے برقی مصنوعات کے شعبے سے وابستہ اداروں، نے میلے میں نفع بخش معاہدے کیے۔ خاص طور پر اسمارٹ مصنوعات کی فروخت میں تیزی سے اضافہ ووا۔

115 ویں میلے میں خریداروں کی حاضری کو بڑھانے کے لیے منتظمین کی جانب سےمختلف جدید طریقے اختیار کیے گئے۔ 2013ء میں متعارف کروائی گئی “نمائش کنندگان خریداروں کو مدعو کریں” اور “موجودہ خریدار نئے خریداروں کو مدعو کریں” مہمات کو مزید بہتر بنایا اور پھیلایا گیا، جس میں نمائش کنندگان کی جانب سے بھیجے گئے دعوت ناموں اور موجودہ خریداروں کی تعداد میں زبردست اضافہ ہوا۔ بھارت میں ایک نئے تشہیری و تعارفی پروگرام نے میلے کے دعوت ناموں کو سوشل میڈیا پر خصوصی انٹرویوز کو یکجا کیا۔

پنکھ کی مصنوعات بنانے والے ادارے کے مینیجر ین چین یو اپنے ادارے کی جانب سے بھیجے گئے دعوت ناموں پر ملنے والے ردعمل سے خوش تھے۔ ین نے بتایا کہ “ہم نے پہلے ہی دن 30 سے زیادہ افراد کا خیرمقدم کیا جو دعوت نامے پر آئے تھے۔ ہم ایک ملائیشین خریدار سے پہلے ہی 50,000 ڈالرز کا آرڈر حاصل کرچکے ہیں۔ دعوت نامے وصول کرنے والے تمام خریدار میلے میں بغیر رجسٹریشن فیس کے داخل ہوسکتے ہیں، اس لیے یہ کہیں زیادہ مناسب ہے۔”

بذات خود میلے نے بھی تمام حلقوں کی جانب سے مثبت ردعمل پایا۔ 115 واں میلہ تیسرا موقع تھا کہ سوڈان کے تعمیراتی مواد خریدنے والے ادارے باستان نے اس میں شرکت کی۔ “یہ غیر ملکی تھوک فروشوں کے لیے بہترین مقام ہے،” سوڈانی نے کہا۔ “میری خریدی گئی آدھی مصنوعات وطن واپسی پر خوردہ فروش خرید لیں گے۔ سوڈان میں کئی مصنوعات چین سے آتی ہیں۔ قیمتیں بہت مناسب ہیں اور معیار اور کارکردگی کے لحاظ سے امتیازی ہیں۔”

“میں نے کبھی اتنے زیادہ صارفین کو ایک ہی مقام پر معاہدوں کا خواہشمند نہیں دیکھا،” گھریلو مصنوعات بنانے والے مصری ادارے یونین ایئر کے ڈپٹی ڈائریکٹر احمد فواد نے کہا، “یہ ہماری توقعات سے کہیں زیادہ ہے۔”

مزید معلومات کے لیے ملاحظہ کیجیے: http://www.cantonfair.org.cn/en/index.asp

ذرائع ابلاغ کے سوالات کے لیے:

جناب وو سیاؤینگ
ٹیلی فون: 8628- 8913- 20- 86+
ای میل: xiaoying.wu@cantonfair.org

The post 115 واں کینٹن میلہ: بہترین جدت طرازی اور خدمت تجارت کے مستقبل کو ظاہر کرتی ہوئی appeared first on AsiaNet-Pakistan.

Leave a Reply