111 واں کینٹن میلہ “ابھرتی ہوئی مارکیٹ کی بڑھتی ہوئی اہمیت”

گوانگ چو، چین، 13 اگست 2012ء/پی آرنیوزوائر-ایشیا –

اس وقت جب دنیا کے بہترین کھلاڑی گرما کے کھیلوں کے موسم میں اپنی بھرپور قوتیں صرف کر رہے ہیں، انہی ایام میں انفرادی شخصیات اور حکومتیں عالمی معیشت کے چیلنجز سے نمٹنے کے لیے ویسی ہی سخت کوششیں کر رہی ہیں۔ یورپ میں ماہرین جاری یورو بحران کے حل کے لیے کام کررہے ہیں، جبکہ امریکہ میں چھوٹے کاروباری ادارے اپنی فروخت میں اضافے کے لیے آن لائن کی جانب رخ کر رہے ہیں۔ کساد بازاری کو شکست دینا اپنی نہاد میں خود تمغے بخشنے کے قابل سرگرمی ہو گئی ہے۔

چین میں، روس اور برازیل جیسی ترقی پذیر معیشتوں کے ساتھ تجارت میں بڑھاوے کی اضافی کوششیں کی گئی ہیں۔ چینی وزیر اعظم وین جیاباؤ نے حال ہی میں چین اور جنوبی امریکی تجارتی بلاک مرکوسر کے درمیان آزاد تجارت کے معاہدے کی تجویز پیش کی ہے، اس بلاک میں برازیل اور ارجنٹائن شامل ہیں۔ چین اگلے پانچ سالوں میں لاطینی امریکہ کے ساتھ اپنی سالانہ تجارت کو دوگنا کرتے ہوئے 400 ارب امریکی ڈالرز تک لے جانا چاہتا ہے۔

روس، ایک اور نئی مارکیٹ، چین کا اہم ترین اسٹریٹجک شراکت دار ہے اور دونوں ممالک کے درمیان تجارتی تعلقات بدستور خوشگوار ہیں۔دونوں ممالک کے درمیان تجارت 2011ء میں تقریباً 80 ارب ڈالرز تک پہنچی – ہدف 2020ء تک 200 ارب امریکی ڈالرز تک پہنچانا ہے۔

ترقی پذیر ممالک کے ساتھ تجارت میں اضافہ مئی میں مکمل  ہونے والے چین کے سب سے بڑے تجارتی شو 111 ویں کینٹن میلے کے امید افزا رحجانات میں سے ایک تھا۔ بی آر آئی سی ممالک اور دیگر ابھرتی ہوئی مارکیٹوں کے ساتھ کاروبار میں 4 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

چین کی پارچہ بافی وملبوسات کی صنعت نئے تجارتی تعلقات کا فائدہ اٹھا رہی ہے، جس کی لاطینی امریکہ کے ممالک کے لیے برآمدات میں گزشتہ سال 38 فیصد اضافہ ہوا۔ 111 ویں کینٹن میلے کے تیسرے مرحلے میں حصہ لینے والے 4 ہزار سے زائد پارچہ بافی و ملبوسات بنانے والےادارے ابھرتی ہوئی مارکیٹ صلاحیتوں کو تلاش کرنے کے خواہاں ہیں۔

روایتی چینی ادویات اور صحت کی مصنوعات کی مارکیٹ بھی حوصلہ افزا ہے۔ میلے کے منتظمین کے مطابق گزشتہ سالوں کےمقابلے میں روسی خریداروں میں کافی اضافہ ہوا۔ میکانیکی اور برقی مصنوعات کی تجارت نے بھی جامع رحجان پایا – اور لاطینی امریکہ کے اداروں کے ساتھ معاہدوں کی قدر میں سال بہ سال 18.5 فیصد اضافہ ہوا۔ آنہوئی لائٹ انڈسٹری انٹرنیشنل کمپنی لمیٹڈ کے سیلزمین وانگ بیاؤ نے کہا کہ ان کا ادارہ جنوبی امریکہ اور روس سے کہیں زیادہ خریداروں سے معاہدے کر چکا ہے۔

ابھرتی ہوئی معیشتیں دنیا کی نئی تجارت کی بیشتر توجہ کا مرکز ہیں۔ چین نئے کاروباری مواقع کا فائدہ اٹھانے کے لیے بہترین مقام پر موجود ہے، اور کینٹن میلہ اعلیٰ معیارکی چینی مصنوعات خریدنے کے لیے بہترین و واحد مقام ہے۔

خریداروں اور فروخت کاروں کی نظریں 112 ویں سیشن پر مرکوز ہیں، جو 15 اکتوبر 2012ء سے شروع ہو رہا ہے۔

مزید معلومات کے لیے ملاحظہ کیجیے: http://www.cantonfair.org.cn/en/index.asp

رابطہ: جناب وو سیاؤینگ، +86-20-8913-8628، xiaoying.wu@cantonfair.org.cn

Leave a Reply