ایشیا میں گریجویٹ اور کاروباری تعلیم کے رحجانات پر توجہ کے لیے جی آر ای (ر) ایشیا ایڈوائزری کونسل کا افتتاحی اجلاس

پرنسٹن، نیو جرسی، 18 جون 2012ء/پی آرنیوزوائر-یو ایس نیوزوائر–

ایشیا بھر کے 10 ممالک میں سے مختلف جامعات اور اداروں کی نمائندگی کرنے والے معروف اعلی تعلیمی ماہرین نے ایجوکیشنل ٹیسٹنک سروس (ETS) اور جی آر ای (ر) بورڈ کے نمائندگان سے جی آر ای (ر) ایشیا ایڈوائزری کونسل (AAC) میں ملاقات کی۔ یہ اجلاس کوریا ایڈوانسڈ انسٹیٹیوٹ آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی (KAIST) نے سیول، جنوبی کوریا میں مئی کے وسط میں منعقد کیا تھا۔ نو تشکیل شدہ کونسل ایشیا میں پوسٹ گریجویٹ تعلیم کے حوالے سے معاملات پر جی آر ای بورڈ کو مشاورت فراہم کر رہی ہے، اور امریکہ سےباہر تشکیل دی گئی دوسری، یعنی یورپین ایڈوائزری کونسل کے بعد پہلی، جی آر ای مشاورتی کونسل ہے۔

(لوگو: http://photos.prnewswire.com/prnh/20120110/DC33419LOGO)

نائب صدر (اکیڈمک افیئرز) اور پرووسٹ نیشنل یونیورسٹی آف سنگاپور تان انگ چائی نے کہا کہ “آنے والے سالوں میں ایشیا میں آنے اور یہاں سے جانے والے گریجویٹ طلبہ زیادہ اہم ہو جائے گا۔ جی آر ای (ر) ایشیا ایڈوائزری کونسل کا قیام اس لیے بروقت ہے۔ کلیدی مفکرین اور ایشیا میں گریجویٹ تعلیم کے اہم محرک افراد پر مشتمل  کونسل اور سیول میں منعقدہ اجلاس نے مجھے متعدد ایشیائی ممالک میں رحجانات، فرق اور بہترین مشقوں سے آگاہ کیا ہے۔”

جی آر ای اے اے سی ایشیا میں اعلیٰ تعلیم کے نمائندگان کو جی آر ای بورڈ میں معلومات پیش کرنے اور اپنا نقطہ نظر فراہم کرنے کے لیے باضابطہ راہ فراہم کرنے کے لیے ڈیزائن کیا گیا ہے۔ یہ جی آر ای پروگرام کے لیے ایشیا میں اعلیٰ تعلیمی برادری کے ساتھ اپنی کاروباری سرگرمیوں اور رابطہ کوبہتر بنانا ممکن بنائے گا۔ جی آر ای بورڈ گریجویٹ برادری اور ایک آزاد ادارے پر مشتمل ہے جو ای ٹی ایس کے زیر انتظام جی آر ای ٹیسٹنگ پروگرام کے لیے پالیسیاں مرتب کرتا ہے ۔ بورڈ اپنی کمیٹیوں سے مشاورت کے ذریعے جی آر ای ٹیسٹس، سروسز اور تحقیق کی نگرانی کرتا ہے۔

ای ٹی ایس کے ہائیر ایجوکیشن ڈویژن کے نائب صدر اور چیف آپریٹنگ آفیسر ڈیوڈ پین نے کہا کہ ” جی آر ای پروگرام کی ایشیا اور دنیا بھر میں اداروں اور تعلیمی اداروں کی ضروریات کو پورا کرنے کی کوششوں کے دوران ایشیا ایڈوائزری کونسل کا قیام اس ہدف کی جانب ایک اہم قدم ہے۔ ایشیا ایڈوائزری کونسل ایشیا میں گریجویٹ اور بزنس اسکولوں کے دستیاب مواقع اور درپیش چیلنجز کے حوالے سے گہری نظر فراہم کرتا ہے، اور ای ٹی ایس اور جی آر ای پروگرام کو ان پروگراموں کی جانچ  کے لیے درکار مدد فراہم کرنے کی سہولت دے رہا ہے۔”

اے اے سی کے پہلے اجلاس کی توجہ گریجویٹ اور بزنس تعلیم میں اہم رحجانات  اور شعبے میں جانچ کے کردار پر رہی۔ نیشنل سنگ ہوا یونیورسٹی کے نائب صدر برائے اکیڈمک افیئرز سن-وین چین نے کہا کہ “مختلف ایشیائی جامعات کی پریزنٹیشنز بہت معلومات اور تحریک پر آمادہ کرنے والی رہیں۔ ہماری جامعہ کے کئی شعبہ جات اور ادارے اپنے داخلہ کے عمل میں جی آر ای اسکورز کا استعمال کرتے ہیں۔ دنیا بھر کے مختلف خطوں سے بین الاقوامی طالب علموں کے ساتھ جی آر ای ٹیسٹ طلبہ کے انتخاب کے لیے انتہائی مناسب اور بنیادی جانچ کا ذریعہ ہے۔”

جی آر ای اے اے سی 2013ء میں ایک مرتبہ پھر ایشیا میں اجلاس کرے گا۔ مزید معلومات کےلیے رابطہ کیجیے gre-asia@etsglobal.org۔

ای ٹی ایس کے بارے میں

ای ٹی ایس میں ہم نے زبردست تحقیق کی بنیاد پر جانچ تخلیق کرنے کے ذریعے دنیا بھر میں لوگوں کے لیے تعلیم میں معیار اور برابری کو آگے بڑھایا ہے۔ ای ٹی ایس انفرادی شخصیات، تعلیمی اداروں اور حکومتی اداروں کو اساتذہ کی سرٹیفکیشن، انگریزی زبان سیکھنے، اور ابتدائی، ثانوی اور بعد از ثانوی تعلیم کے ساتھ ساتھ تعلیمی تحقیق، تجزیے اور پالیسی اسٹڈیز کے لیے کسٹمائزڈ سلوشنز فراہم کرنے کی خدمات انجام دیتا ہے۔ 1947ء میں ایک غیر منافع بخش ادارے کی حیثیت سے قائم کیا گیا ای ٹی ایس سالانہ 50 ملین سے زائد ٹیسٹس تیار، نگرانی اور اسکور کرتا ہے  جن میں دنیا بھر میں 180 سے زیادہ ممالک میں 9 ہزار سے زائد مقامات پر ٹوفل (ر) اور ٹوئیک (ر) ٹیسٹس، جی آر ای (ر) ٹیسٹ اور پراکس سیریز (ٹ م) جانچ شامل ہیں ۔

Leave a Reply