Tag Archives: Anti-Defamation League

ADL Poll Of Over 100 Countries Finds More Than One-Quarter Of Those Surveyed Infected With Anti-Semitic Attitudes

– Only 54 Percent Of Respondents Have Heard Of The Holocaust

NEW YORK, May 13, 2014 / PRNewswire – The Anti-Defamation League (ADL) today released the results of an unprecedented worldwide survey of anti-Semitic attitudes. The ADL Global 100: An Index of Anti-Semitism surveyed 53,100 adults in 102 countries in an effort to establish, for the first time, a comprehensive data-based research survey of the level and intensity of anti-Jewish sentiment across the world.

The survey found that anti-Semitic attitudes are pervasive around the world. More than one-in-four adults, 26 percent of those surveyed, are deeply infected with anti-Semitic attitudes. This figure represents an estimated 1.09 billion people.  The poll found that only 54 percent of those polled globally have ever heard of the Holocaust. Two out of three people surveyed have either never heard of the Holocaust, or do not believe historical accounts to be accurate.

The overall ADL Global 100 Index score represents the percentage of respondents who answered “probably true” to six or more of 11 negative stereotypes about Jews. An 11-question index has been used by ADL as a key metric in measuring anti-Semitic attitudes in the U.S. for the last 50 years.

In India, the survey found that 20 percent of the adult population, about 150 million people, holds strong anti-Semitic attitudes.

“For the first time we have a real sense of how pervasive and persistent anti-Semitism is today around the world,” said Abraham H. Foxman, ADL National Director.  “The data enables us to look beyond anti-Semitic incidents and rhetoric and quantify the prevalence of anti-Semitic attitudes across the globe. We can now identify hotspots, as well as countries and regions of the world where hatred of Jews is essentially non-existent.”

Available through an interactive web site at http://global100.adl.org, the ADL Global 100 Index will give researchers, students, governments and members of the public direct access to a treasure trove of current data about anti-Semitic attitudes. The survey ranks countries and territories from the least anti-Semitic (Laos, at 0.2 percent) to the most (West Bank and Gaza, at 93 percent).

There are also some highly encouraging notes. In majority English-speaking countries, the percentage of those with anti-Semitic attitudes is 13 percent, far lower than the overall average. Protestant majority countries have the lowest ratings of anti-Semitic attitudes, as compared to any other majority religious country. And 28 percent of respondents around the world do not believe that any of the 11 anti-Semitic stereotypes tested are “probably true.”

ADL commissioned the polling firms First International Resources and Anzalone Liszt Grove Research to conduct the poll of attitudes toward Jews. Data was gathered from interviews conducted between July 2013 and February 2014 in 96 languages and dialects via landline telephones, mobile phones and face-to-face discussions.

Respondents were asked a series of 11 questions based on age-old stereotypes about Jews, including stereotypes about Jewish power, loyalty, money and behavior. Those who responded affirmatively to six or more negative statements about Jews are considered to hold anti-Semitic attitudes. The margin of error for most countries, where 500 respondents were selected, is +/- 4.4 percent. In various larger countries, where 1,000 interviews were conducted, the margin of error is +/- 3.2 percent.

ADL Global Index: Anti-Semitism by Region
The highest concentration of respondents holding anti-Semitic attitudes was found in Middle East and North African countries (“MENA”), where nearly three-quarters of respondents, 74 percent of those polled, agreed with a majority of the anti-Semitic stereotypes.  Non-MENA countries have an average index score of 23 percent.

Outside MENA, the index scores by region were as follows:

  • Eastern Europe: 34 percent
  • Western Europe: 24 percent
  • Sub-Saharan Africa: 23 percent
  • Asia: 22 percent
  • The Americas: 19 percent
  • Oceania: 14 percent

More information on the ADL Global 100, including country-by-country comparisons, is available online at http://global100.adl.org

The Anti-Defamation League, founded in 1913, is the world’s leading organization fighting anti-Semitism through programs and services that counteract hatred, prejudice and bigotry.

The post ADL Poll Of Over 100 Countries Finds More Than One-Quarter Of Those Surveyed Infected With Anti-Semitic Attitudes appeared first on Business News Pakistan.

The post ADL Poll Of Over 100 Countries Finds More Than One-Quarter Of Those Surveyed Infected With Anti-Semitic Attitudes appeared first on AsiaNet-Pakistan.

اے ڈی ایل کا 100 سے زائد ممالک کا پول ظاہر کرتا ہے کہ ایک چوتھائی سے زائد جواب دینے والے یہودی مخالف جذبات رکھتے ہیں

– صرف 54 فیصد جواب دینے والوں نے ہولوکاسٹ کے بارے میں سن رکھا تھا

نیو یارک، 13 مئی 2014ء/پی آرنیوزوائر — اینٹی-ڈی فیمیشن لیگ (ADL) نے آج یہودی مخالف جذبات کے حوالے سے ایک غیر معمولی عالمی سروے کے نتائج ظاہر کردیے۔ اے ڈی ایل گلوبل100: یہودی مخالف اشاریے میں 102 ممالک کے 53,100 بالغ افراد کا سروے کیا گیا تاکہ پہلی بار دنیا بھر میں یہودی مخالف جذبات کی سطح اور شدت کے بارے میں اعدادوشمار کی بنیاد پر جامع تحقیقی سروے کیا جا سکے۔

سروے سے معلوم ہوا کہ یہودی مخالف جذبات دنیا بھر میں نفوذ کررہے ہیں۔ ہر چار میں سے ایک سے زیادہ بالغ افراد، سروے شدہ افراد میں سے 26 فیصد، میں پہلے ہی یہودی مخالف جذبات بری طرح سرایت کیے ہوئے ہیں۔ یہ اعدادوشمار 1.09 ارب افراد کی نمائندگی کرتے ہیں۔ پول نے جانا کہ دنیا بھر میں ان میں سے صرف 54 فیصد افراد نے ہی ہولوکاسٹ کےبارے میں سن رکھا ہے۔ سروے میں ہر تین میں سے دو افراد نے یا تو ہولوکاسٹ کے بارے میں بالکل نہیں سن رکھا، یا پھر وہ اس کے تاریخی اعدادوشمار کو درست نہیں مانتے۔

مجموعی اے ڈی ایل گلوبل 100 انڈیکس اسکور جواب دینے والوں کے تناسب کی نمائندگی کرتا ہے جنہوں نے یہودیوں کے بارے میں 11 منفی مفروضوں کے بارے میں چھ یا زیادہ کو “غالباً سچ” قرار دیا۔ 11 سوالوں کا اشاریہ گزشتہ 50 سالوں سے امریکہ میں یہودی مخالف رحجانات ناپنے کے لیے اے ڈی ایل کی جانب سے کلیدی معیار کی حیثیت سے استعمال کیا گیا۔

بھارت میں سروے نے جانا کہ 20 فیصد بالغ آبادی، تقریباً 150 ملین افراد، سخت یہودی مخالف جذبات رکھتے ہیں۔

اے ڈی ایل نیشنل ڈائریکٹر ابراہم ایچ فوکس مین نے کہا کہ “پہلی بار ہم نے حقیقی احساس پایا ہے کہ دنیا بھر میں یہودی مخالف جذبات کس حد تک سرایت پا چکے ہیں اور مستقل بنیادوں پر ہیں۔ اعدداوشمار ہمیں یہودی مخالف واقعات اور جذباتی تقاریر سے آگے اور دنیا بھر میں یہودی مخالف رویوں کے پھیلاؤ کا اندازہ لگانے میں مدد دیتےہیں۔ ہم اب اہم مقامات کو شناخت کرسکتے ہیں، اور ساتھ ساتھ دنیا بھر کے ممالک اور خطوں کو بھی کہ جہاں یہودیوں کے خلاف نفرت درحقیقت وجود ہی نہیں رکھتی۔”

انٹرایکٹو ویب سائٹ http://global100.adl.orgکے ذریعے دستیاب اے ڈی ایل گلوبل 100 انڈیکس محققین، طلباء، حکومتوں اور براہ راست عوامی رسائی کے حامل افراد کو یہودی مخالف رویوں کے بارے میں موجود اعدادوشمار تک براہ راست رسائی دے گا۔ سروے کم ترین یہودی مخالف جذبات (لاؤس 0.2 فیصد) سے لے کر سب سے زیادہ (مغربی کنارہ و غزہ، 93 فیصد) تک کے ممالک اور خطوں کو درجہ بندی دیتا ہے۔

چند انتہائی حوصلہ افزاء اشارے بھی ہیں۔ انگریزی بولنے والے اکثر ممالک میں یہودی مخالف رویے 13 فیصد ہیں، جو مجموعی اوسط سے کہیں کم ہیں۔ پروٹسٹنٹ اکثریت رکھنے والے ممالک میں یہودی مخالف جذبات دیگر مذہبی ممالک کے مقابلے میں سب سے کم ہیں۔ اور دنیا بھر میں جواب دینے والے 28 فیصد افراد نے 11 یہودی مخالف مفروضوں میں سے کسی کو بھی “حقیقت” نہیں جانا۔

اے ڈی ایل نے فرسٹ انٹرنیشنل ریسورسز اور اینزالون لزسٹ گرو ریسرچ کو یہودیوں کے بارے میں رویوں کو جاننے کے لیے پولنگ کی خاطر اختیار دیا تھا۔  یہ اعدادوشمار جولائی 2013ء سے فروری 2014ء کے دوران 96 زبانوں اور لہجوں میں لینڈ لائن ٹیلی فونز، موبائل فونز اور بالمشافہ گفتگو سے جمع کیے گئے۔

جواب دینے والوں سے یہودیوں کے بارے میں قدیم مفروضوں کی بنیاد پر 11 سوالات کا مجموعہ پوچھا گیا، جس میں یہودیوں کی طاقت، وفاداری، پیسہ اور رویہ کے بارے میں مفروضے شامل تھے۔ جنہوں نے یہودیوں کے بارے میں چھ یا زیادہ منفی بیانات کا جواب اثبات میں دیا انہیں یہودی مخالف رویے کا حامل قرار دیا گیا۔ بیشتر ممالک کے لیے غلطی کی گنجائش، +/- 4.4 فیصد ہے جہاں 500 جواب دینے والوں کو منتخب کیا گیا۔ متعدد بڑے ممالک میں جہاں 1,000 انٹرویو کیے گئے، غلطی کی گنجائش +/- 3.2 فیصد ہے۔

اے ڈی ایل گلوبل انڈیکس: یہودی مخالف جذبات بلحاظ خطہ

یہودی مخالف رویوں کا سب سے زیادہ ارتکاز مشرق وسطیٰ و شمالی افریقہ (“مینا”) میں پایا گیا، جہاں تقریباً تین چوتھائی جواب دینے والے، یعنی 74 فیصد، نے اکثر یہودی مخالف مفروضوں سے اتفاق کیا۔ اس خطے کے علاوہ دیگر ممالک میں اوسط انڈیکس اسکور 23 فیصد رہا۔

مینا سے باہر، بلحاظ خطہ انڈیکس اسکورز یہ رہے:

  • مشرقی یورپ: 34 فیصد
  • مغربی یورپ: 24 فیصد
  • نیم صحراوی افریقہ: 23 فیصد
  • ایشیا: 22 فیصد
  • امریکین: 19 فیصد
  • اوقیانوسیہ: 14 فیصد

اے ڈی ایل گلوبل 100 پر مزید معلومات، بشمول ملک بہ ملک تقابل، آن لائن http://global100.adl.orgپر دستیاب ہے۔

1913ء میں قائم ہونے والی اینٹی-ڈی فیمیشن لیگ نفرت، تعصب اور بدگمانی سے نمٹنے کے لیے پروگرام اور خدمات پیش کرکے یہودی مخالف جذبات کے خلاف لڑنے والی دنیا کی سب سے بڑی انجمن ہے۔

The post اے ڈی ایل کا 100 سے زائد ممالک کا پول ظاہر کرتا ہے کہ ایک چوتھائی سے زائد جواب دینے والے یہودی مخالف جذبات رکھتے ہیں appeared first on Business News Pakistan.

The post اے ڈی ایل کا 100 سے زائد ممالک کا پول ظاہر کرتا ہے کہ ایک چوتھائی سے زائد جواب دینے والے یہودی مخالف جذبات رکھتے ہیں appeared first on AsiaNet-Pakistan.