Tag Archives: AmbassadorsForPhilanthropy.com

AmbassadorsForPhilanthropy.com دنیا کو خدمت خلق کی طاقت کو نمایاں کرنے کا چیلنج دے رہا ہے

AsiaNet 46976

نیو یارک اور لندن، یکم نومبر/پی آرنیوزوائر-ایشیانیٹ/

خیراتی  اور خدمت خلق کے اداروں، کمپنیوں اور  حکومتوں کو ‘خدمت خلق کے حامیوں کو آواز’ بخشنے کے لیے ایک جدید عالمی تحریک میں شمولیت کی دعوت

برطانوی حکومت کی اولین سفیر برائے خدمت خلق ڈیم اسٹیفنی شرلے نے آج ایک بین الاقوامی تحریک AmbassadorsForPhilanthropy.com کا اجراء کیا ہے ، جو خیراتی اداروں، کمپنیوں، خدمت خلق کے اداروں اور حکومتوں کو “دینے کی عالمی صلاحیتوں کو نمایاں کرنے” کی عالمی کوششوں کے لیے یکجا کرنے کی ایک عالمی تحریک ہے۔

ملٹی میڈیا نیوز ریلیز دیکھنے کے لیے کلک کیجیے:

http://multivu.prnewswire.com/mnr/prne/ambassadorsforphilanthropy/52163/

ڈیم اسٹیفنی ایک معروف انسان دوست شخصیت ہیں جو اپنے سافٹ ویئر کاروبار سے کمائے گئے لاکھوں کروڑوں ذاتی روپے خیرات کر چکی ہیں۔ وہ اور ان کی ٹیم ‘خدمت خلق کے حامیوں کو آواز بخشنے’ کو ایک حقیقت کا زندہ روپ دینے کے لیے خدمت خلق کی صلاحیتوں کی کایا پلٹنے سے وابستہ ہے۔

دنیا بھر میں AmbassadorsforPhilanthropy.com کا خیال اپنا رہی ہیں تاکہ وہ دینے کے لیے اپنے قاصد مقرر کر سکیں، جبکہ اچھے مقاصد اور ادارے، جیسا کہ سیو چائناز ٹائیگرز، دی ڈایا، پرنسس آف ویلز میموریل فنڈ، آٹزم اسپیکس، ویلیو ورکس، پروجیکٹ یونٹی، مرلن، نیو اورلینز سٹی پارک اور کئی دیگر دینے کو جدید بنانے کے اس عالمی پلیٹ فارم میں شمولیت اختیار کر رہے ہیں۔

نئی تحریک کا ایک کلیدی حصہ آج کے خدمت خلق کارکنوں کو آواز بخشنا ہے: حکومتوں میں، ذرائع ابلاغ میں اور ان مقاصد کے لیے جن کے وہ حامی ہیں۔ AmbassadorsforPhilanthropy.com میں شمولیت اختیار کرنے والی انجمنیں اپنے عطیہ دہندگان کی توثیق کے لیے وڈیوز تخلیق اور پیش کرنے کے لیے مائیکروسائٹس بنا رہی ہیں۔

اس کوشش میں AmbassadorsforPhilanthropy.com کے ساتھ ایک نئی ڈیجیٹل پبلی کیشن گوِنگ میگزین  بھی شامل ہے جو دنیا بھر میں خدمت خلق کی آواز ہے اور ایک ملین سے زائدخدمت خلق کے کارکنوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔

ڈیم اسٹیفنی نے کہا کہ “خدمت خلق اچھائی کے لیے ایک ناقابل یقین قوت ہے، جو ان باصلاحیت افراد کی وجہ سے زندہ ہے جو اہم مسائل سے نمٹنے کے لیے گہری معلومات رکھتے ہیں۔

“خدمت خلق لامحدود مقاصد حاصل کر سکتی ہے اگر اسے سرخ فیتے، افسر شاہی کی ٹیکس پالیسیوں اور فرسودہ قوانین کے شکنجے سے آزاد کیا جائے کیونکہ یہ قوانین ملک در ملک اپنے عالمی صلاحیتوں کے مطابق تکمیل تک پہنچنے سے روکے ہوئے ہیں۔

“کئی تصفیہ طلب ضروریات کے ساتھ نئے وسائل کو ڈھونڈنے، خدمت خلق کے کارکنوں کو آواز بخشنے اور دینے کی تحریک کی نچلی سطح کے اراکین سے لے کر اعلیٰ حکومتی رہنماؤں تک حوصلہ افزائی کرنے کی فوری ضرورت ہے ۔

“اتنا سب کچھ داؤ پر لگے ہونے کے ساتھ دنیا بھر کے مقاصد اور اداروں پر تحریک میں شمولیت، موجودہ اور ممکنہ خدمت خلق کے کارکنوں، جن کی دولت اور تجربہ ان کے موجودہ اور مستقبل کے قائدانہ کرداروں کی عکاسی کرتا ہے،  کے نیٹ ورک کے ساتھ کام کرنے پر زور دیا جا رہا ہے۔

“مل کے ان کے طاقتور پیغامات عالمی مخاطبین دینے کے ماحول کو تبدیل کرنے اور خدمت خلق کی نئی معراج تک پہنچنے کے لیے انفرادی سطح پر لوگوں کو متاثر کرنے پر اثر ڈالیں گے۔

“ہم سب، ہم میں سے ہر ایک ، خدمت خلق کا سفیر بن سکتا ہے۔”

رابطہ برائے ذرائع ابلاغ: روبرٹا ڈی اوستاچیو

امریکہ میں +1-610-613-7056

برطانیہ میں +44(0)-207-096-1940

RdE@AmbassadorsForPhilanthropy.com

http://www.AmbassadorsForPhilanthropy.com

ذریعہ: AmbassadorsForPhilanthropy.com

AmbassadorsForPhilanthropy.com is Challenging the World to Unleash the Power of Philanthropy

AsiaNet 46976

NEW YORK and LONDON, Nov. 1/ PRNewswire-AsiaNet/ –

Charities, philanthropists, companies, governments invited to join innovative global movement to give ‘philanthropists a voice’

Dame Stephanie Shirley, the British Government’s Founding Ambassador for Philanthropy, today launched AmbassadorsForPhilanthropy.com, a global movement which brings together charities, companies, philanthropists and governments for a worldwide effort “to unleash global giving’s potential”.

To view the Multimedia News Release, please click: http://multivu.prnewswire.com/mnr/prne/ambassadorsforphilanthropy/52163/

Dame Stephanie is a leading philanthropist who has donated millions from her self-made software business. She and her team are devoted to transforming the potential of philanthropy into a dynamic reality by ‘giving philanthropists a voice’.

Around the world, nations are seizing on the AmbassadorsforPhilanthropy.com concept to appoint their own emissaries for giving, while good causes and enterprises, such as Save China’s Tigers, The Diana, Princess of Wales Memorial Fund, Autism Speaks, Value Works, Project Unity, Merlin, New Orleans City Park and many others, are joining this global platform to modernize giving.

A key part of the new movement is to give today’s philanthropists a voice: into governments, the media and the causes they support. Organizations join AmbassadorsForPhilanthropy.com, creating microsites upon which to create and broadcast videos of their donors’ endorsements.

AmbassadorsforPhilanthropy.com is joined in this effort by a new digital publication, Giving Magazine – the philanthropist voice worldwide – distributed to more than 1 million philanthropists.

Dame Stephanie said: “Philanthropy is an incredible force for good, driven by talented people with deep knowledge of the issues to address vital causes.

“There are almost no limits to what philanthropy could achieve if released from the shackles of red tape, bureaucratic tax policies and out-of-date laws that in country after county are holding it back from fulfilling its global potential.

“With so much unmet need, there is an urgency to find new resources, give philanthropists a voice, and embolden this giving movement, from our grassroots members to our government leaders.

“With so much at stake, causes and companies across the world are being urged to join the movement, engaging with a network of existing and potential philanthropists whose wealth and expertise reflects their present and future leadership roles.

“Together, their powerful messages will influence a global audience to both transform the environment for giving and inspire individuals to new philanthropic heights.

“All of us, every one of us, can be an ambassador for philanthropy.”

Media Contact: Roberta d’Eustachio
In U.S. +1-610-613-7056
In U.K. +44(0)-207-096-1940

RdE@AmbassadorsForPhilanthropy.com

http://www.AmbassadorsForPhilanthropy.com

SOURCE: AmbassadorsForPhilanthropy.com