Category Archives: Urdu

گوانگچو کے ہانگپو ضلع کی تشہیری وڈیو کا ٹائمز اسکوائر پر آغاز

وانگچو، چین، 8دسمبر 2017ء/سنہوا-ایشیانیٹ/– جیسا کہ 6سے 8دسمبر تک فورچیون گلوبل فورم 2017ء، جسے “عالمی معیشت کے لیے سب سے واضح اور براہ راست کھڑکی” کے طور پر جانا جاتا ہے، گوانگچو، چین میں ہو رہا ہے، “ہوانگپو -ہوپ”، گوانگچو کے ہوانگپو ضلع کے لیے ایک تشہیری وڈیو، 7دسمبر کو نیو یارک شہر کے ٹائمز اسکوائر پر پیش کی جائے گی جو ہوانگپو ضلع، گوانگچو، چین کی عوامی حکومت کے مطابق جدت طرازی کے بین الاقوامی مرکز کی حیثیت سے ماحول دوست شہر کے شہری حسن کو ظاہر کرنے کے لیے ہے۔

گوانگچو کے مشرق میں 486مربع کلومیٹرز کا احاطہ کرتا ہوا ضلع گوانگچو-شین چین سائنس اینڈ ٹیکنالوجی انوویشن کوریڈور اور گوانگڈونگ-ہانگ کانگ-مکاؤ گریٹر بے ایریا کے لیے “کشش کے میدان” کی حیثیت رکھتا ہے۔

ضلع گوانگ ڈونگ  میں جدت طرازی کے اہم علاقوں، جیسا کہ سینو-سنگاپور گوانگچو نالج سٹی، گوانگچو سائنس سٹی، گوانگچو انٹرنیشنل بایوٹیک آئی لینڈ، ہوانگپو اینڈ ینپو ایریا اور ہوانگپو پورٹ اکنامک زون کو تقویت دیتا ہے۔ یہ مختلف “آئی اے بی” منصوبوں کا میزبان ہے جیسا کہ جنوبی چین میں چائنا ٹیلی کام انوویشن انکوبیشن چین، ای ہینگ انٹیلی جنٹ ایئرکرافٹ انڈسٹریل بیس اور جی ای بایوٹیک پارک، تقریباً 700آر اینڈ ڈی اداروں، 3,400بیرونی ملکیت ادارے اور فورچیون گلوبل 500کمپنیز میں کے 150سے زیادہ منصوبے۔

اگست 2017ء میں کولڈ اسپرنگ ہاربر (گوانگچو) ریسرچ انسٹیٹیوشن اور ایک عالمی معیار کے بایوسائنس تعاون منصوبہ سائنٹیفک اینڈ ٹیکنالوجیکل اچیومنٹس ٹرانسفارمیشن سینٹر باضابطہ طور پر ہوانگپو ضلع میں قائم ہے۔ دنیا بھر سے 600سے زیادہ کارپوریشن چیف ایگزیکٹوز کاروباری تعاون کے لیے یہاں آئے۔ گیارہ منصوبے فورچیون گلوبل 500کارپوریشنز اور 67دیگر بڑے منصوبے یہاں مقیم ہیں، جن کی کل سرمایہ کاری 150ارب رینمنبی کی کل سرمایہ ہے۔

گوانگچو میں فورچیون گلوبل فورم 2017ء ہوانگپو کو ٹیکنالوجی جدت طرازی کے حوالے سے باقی دنیا کو مقناطیسی کشش دینے کا موقع دیتی ہے۔

آلو بخارے کے پھولوں کے کھلنے کے ساتھ، جو بہترین کے حصول کی امید کی علامت ہیں، ٹائمز اسکوائر پر یہ آغاز ہوانگپو کی وسیع ثقافتی تاریخ اور جدت طرازی میں حیران کن تحرّک کو ظاہر کرے گی۔ کیونکہ ہوانگپو صوتی لحاظ سے اتفاقاً امید کے لفظ سے قربت رکھتا ہے، یہ آسانی سے یاد دہانی کرا سکتا ہے کہ ضلع مستقل نمو کے لیے امید اور مواقع کا گہوارا ہے۔

ذریعہ: عوامی حکومت ہوانگپو ضلع، گوانگچو، چین

تصویری منسلکات کے روابط: http://asianetnews.net/view-attachment?attach-id=302616

ڈسکوری چینل اسمارٹ چین کی رونمائی کرتا ہوا: اسٹارٹ اپ انقلاب

سنگاپور، 8 دسمبر 2017ء/پی آرنیوزوائر/– چین اقتصادی سفر کے اگلے مرحلے پر قدم رکھ رہا ہے اسٹارٹ-اپ انقلاب جہاں ٹیکنالوجی اور انٹریپرینیورشپ میں جدت طراز ٹیکنالوجی، دور اندیش شخصیات کی نئی نسل سے تحریک پاتے ہوئے مستقبل کی دنیا کو مضبوط کر رہی ہے۔https://photos.prnasia.com/prnvar/20171206/2007632-1-a

مکمل ملٹی میڈیا ریلیز کے لیے یہاں کلک کیجیے: http://www.prnasia.com/mnr
https://photos.prnasia.com/prnvar/20171206/2007632-1-a
https://photos.prnasia.com/prnvar/20171206/2007632-1-b
https://photos.prnasia.com/prnvar/20171206/2007632-1-c
https://photos.prnasia.com/prnvar/20171206/2007632-1-d

یہ نوجوان اور کامیابی کے طالب کاروباری منتظمین کون ہیں؟ انہیں اپنے خیالات کہاں سے ملتے ہیں، وہ انہیں پیسہ بنانے والے اداروں میں کیسے تبدیل کر رہےہیں؟ کیا یہ چينی اسٹارٹ اپ انقلاب ہماری زندگی کے طور طریقوں کو بدلے گا؟

اس نئی 3 اقساط پر مشتمل ڈسکوری چینل کی دستاویزی فلم میں میزبان ڈاکٹر جارڈن اینگوین – ایک اعزاز یافتہ موجد ، ڈیزائنر، جدت طراز اور کاروباری منتظم – یہ جاننے کے لیے چین آئے۔ وہ چین: بیجنگ، شنگھائی، دریائے یانگزے کے ڈیلٹا، شین چین اور گوانگچو کی “سلیکون ویلیز” میں گئے۔https://photos.prnasia.com/prnvar/20171206/2007632-1-b

پہلی قسط میں جارڈن بیجنگ کی کھوج کی تاکہ ایسے نئے اداروں کا پتہ چلا سکیں جو  مقابل عالمی معیشتوں میں سے بیشتر میں  کامیابی حاصل کریں۔ انہوں نے پایا کہ کس طرح دارالحکومت کی معروف جامعات، وینچر کیپیٹلز اور سرکاری پالیسی چونگ گوانکن میں چین کی ‘سلیکون ویلی’ کو تخلیق کرنے میں مدد دے رہے ہیں۔

قسط 2 میں جارڈن دریافت کرتے ہیں ک کس طرح دریائے یانگزے کے ڈيلٹا کی دلچسپ تاریخ پنپتے ہوئے اسٹارٹ اپس کی اقسام کو متاثر کر رہی ہے اور کاروباری منتظمین کس طرح اس انوکھے کردار کا فائدہ اٹھا رہے ہیں۔ چانگ جیانگ سائنس پارک میں شنگھائی کی بین الاقوامی گھریلو تعمیر کاری میں جدت طرازی سے لے کر معروف بایومیڈیکل اور  ادویات ساز کامیابیوں کے جدت طراز سرمایہ کاری نمونوں تک۔https://photos.prnasia.com/prnvar/20171206/2007632-1-c

تیسری قسط جارڈن کو دنیا کے سب سے بڑے ٹیکنالوجی مرکز شین چین لے جاتی ہے۔ جارڈن ان اداروں سے ملتے ہیں جنہوں نے شین چین کے اپنے ساخت گری کے ماضی سے تعلق کو بڑھایاہے، ایسے ادارے سے جو ڈرون مارکیٹ کا 70 فیصد حصہ رکھتا ہے، لندن میں بجلی سے چلنے والی بسیں فروخت کرنے والی کار کمپنی کی جدید آر اینڈ  کامیابی تک۔

اسمارٹ چین: اسٹارٹ اپ انقلاب
خطہ فیڈ قسط1 قسط2 قسط3
جنوب مشرقی ایشیا ڈسکوری چینل ایم وائی 2 دسمبر سنیچر 2250 بجے 9 دسمبر سنیچر 2250 بجے 16 دسمبر سنیچر 2250 بجے
ڈسکوری چینل  ایس ای اے 2 دسمبر سنیچر 2250 بجے 9 دسمبر سنیچر  2250 بجے 16 دسمبر سنیچر  2250 بجے
ڈسکوری چینل  پی ایچ 2 دسمبر سنیچر 2240 بجے 9 دسمبر سنیچر  2240 بجے 16 دسمبر سنیچر  2240 بجے
اے این زیڈ ڈسکوری چینل  اے یو 2 دسمبر سنیچر 2300 بجے 3 دسمبر سنیچر 2230 بجے 16 دسمبر سنیچر  2300 بجے
ڈسکوری چینل  این زیڈ 2 دسمبر سنیچر  2240 بجے 3 دسمبر سنیچر 2225 بجے 16 دسمبر سنیچر 2240 بجے
انڈیا ڈسکوری چینل  انڈیا 2 دسمبر سنیچر 2300 بجے 9 دسمبر سنیچر 2300 بجے 16 دسمبر سنیچر  2300 بجے

https://photos.prnasia.com/prnvar/20171206/2007632-1-dجینی چینگ
86-188-1308-3956+
Jennie_Zhang@discovery.com
وڈیو – http://static.prnasia.com/pro
تصویر- https://photos.prnasia.com
تصویر- https://photos.prnasia.com
تصویر- https://photos.prnasia.com
تصویر- https://photos.prnasia.com

‫انڈونیشیائی قومی آبادی و خاندانی منصوبہ بندی بورڈ (بی کے کے بی این) منصوبے بنائے گا، خاندانی منصوبہ بندی، خاندانی ترقی اور خاندانی انتظام کے پروگراموں تک رسائی تیز ہوگی

جکارتا، انڈونیشیا، یکم دسمبر 2017ء/پی آرنیوزوائر/–

14 ویں بین الاقوامی بین الوزارتی کانفرنس برائے آبادی و ترقی (آئی آئی ایم سی) 28 تا 29 نومبر، 2017ء، یوگیاکارتا، انڈونیشیا میں شروع ہوئی۔ ایشیا، افریقہ اور لاطینی امریکا کے 26 ممالک سے تقریباً 250 شرکاء آبادی، تولیدی صحت اور خاندانی منصوبہ بندی پر تجربات کے تبادلے کے لیے جمع ہوئے۔ نتائج میں یوگیاکارتا اعلامیہ شامل ہے: عملی قدم اٹھانے کا مطالبہ جس کا ہدف خاندانی بہبود و ترقی کو حاصل کرنے کے لیے حقوق کی بنیاد پر خاندانی منصوبہ بندی تک بہتر رسائی کو تیز کرنا ہے۔

مکمل ملٹی میڈیا اعلامیہ دیکھنے کے لیے یہاں کلک کیجیے: http://www.prnasia.com/mnr/bkkbn_20171129.shtml

یوگیاکارتا اعلامیہ آبادی میں اضافے، خاندانی منصوبہ بندی اور خاندانی ترقی کے لیے کلیدی سفارشات کی تکمیل کرتا ہے، جن میں بالغان کی تولیدی صحت کی تعلیم؛ شہری و دیہی علاقوں میں خاندانی منصوبہ بندی؛ جدت طرازی کی ترویج میں سرمایہ کاری شامل ہیں جیسا کہ پسے ہوئے طبقے کے لیے مشاورتی مراکز۔

کانفرنس کے نتائج اپریل 2018ء میں نیو یارک میں اقوام متحدہ کے 51 ویں خصوصی اجلاس میں پیش کیے جائیں گے۔

14 ویں آئی ایم سی کی میزبانی حکومت انڈونیشیا (بی کے کے بی این)، نے پی پی ڈی اور اقوام متحدہ کے فنڈ برائے آبادی (یو این ایف پی اے) نے “ماحول دوست شہر، انسانی تحرّک اور بین الاقوامی ہجرت: ایک جنوب-جنوب نقطہ نظر اور مداخلت کی ضروریات” تھا۔ تقریب کا افتتاح وزارت انسانی ترقی و ثقافتی امور کی شریک وزیر پوان مہارانی نے کیا۔

تقریب کے دوران تمام وفود نے ملانگریجو، این گیمپلاک ضلع، یوگیاکارتا میں کامپونگ کے بی کا دورہ کیا تاکہ انڈونیشیا میں خاندانی منصوبہ بندی کے نفاذ کو دیکھیں۔ کامپونگ کے بی بی کے کے بی این کی جانب سے شروع کیا گیا ایک پروگرام تاکہ وہ انڈونیشیا میں دور دراز علاقوں میں ترتیب دیا جا سکے، صحت کی خدمات، تعلیم اور زندگی گزارنے کے سلیقے تک باآسانی رسائی کو یقینی بنائے۔

2016ء میں شروع کیا گیا کامپونگ کے بی خواتین کو بچوں کو پالنے کی اچھی معلومات، تخلیقی صلاحیتوں کو مستحکم کرنے اور گھریلو دستکاری کی فراہمی کا شعور دیتا ہے جو انہیں خود انتظامی اور خاندانی بہبود کی طرف رہنمائی دیتا ہے۔ وفود نےنوجوانوں کے لیے معلومات و مشاورت کے مرکز (پی آئی کے-آر) کا دورہ کیا، جو اراکین کے لیے شادی میں تاخیر، زندگی کی مہارتوں اور صنفی برابری پر معلومات کی شیئرنگ کےسیشنزکرتا ہے۔

15 سالوں میں خاندانی منصوبہ بندی کا پروگرام انڈونیشیا میں ثمر آور آبادی میں بڑا اضافہ کرے گا۔ موجودہ انحصار کا تناسب <50 ہے اور 2028ء سے 2031ء کے درمیان یہ مسلسل گھٹتا ہوا اپنی کم ترین شرح 47 تک پہنچ جائے گا۔ یہ انڈونیشیا کی آبادی کے معیار زندگی کو بہتر بنانے کا سنہرا موقع ہوگا۔، ایچ نوفریجل پرنسپل سیکریٹری بی کے کے بی این نے کہا۔

رابطہ برائے ذرائع ابلاغ:
فابیولا ٹی
قومی آبادی و خاندانی منصوبہ بندی بورڈ
فون: 7169-8400-812-62+
ای میل: fabiolatazrina@yahoo.com

‫2017ء سانیا انرجی انٹرنیشنل فورم سانیا، چین میں

سانیا، چین، 29 نومبر 2017ء/سن ہوا -ایشیانیٹ/–

“سبز توانائی اورکم کاربن معیشت”  کے موضوع پر 2017ء سانیا انرجی انٹرنیشنل فورم (ایس ای آئی ایف) 7 سے 8 دسمبر 2017ء کو سانیا، ہائنان، چین میں منعقد ہوگا۔ تب تک وطن سے لے کر بیرون ملک تک توانائی پر 200 ماہرین اور علمی شخصیات پر مشتمل شرکاء موجودہ عالمی توانائی استعمال کے حوالے سے خیالات کے تبادلے، اور سبز توانائی اور اسمارٹ شہر کی تکمیل اور مشترکہ تعمیر کے لیے فورم میں جمع ہوں گی۔

فورم صاف توانائی کے موضوعات پر مرکوز ہوگا جیسا کہ “بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے کے تحت عالمی توانائی تعاون میں نئے مواقع”، “ہائیڈروجن توانائی کی مستقبل میں پیشرفت” اور “سمت جس میں برقی گاڑیوں کی صنعت جا رہی ہے۔” مقامی اور غیر ملکی معروف توانائي اداروں، بشمول بی پی، شیل، بی اے ایس ایف اور ڈاؤ، کے نمائندگان فورم میں جمع ہوں گے تاکہ سر جوڑیں، توانائی پر اپنے خیالی تناظر کو پیش کریں اور ترقی کے امکانات اور صاف توانائی کی جدید پیشرفت پر تحقیق کریں۔ دریں اثناء، فورم 2017ء ایم این سی جنرل اسمبلی میٹنگ اور سسٹین ایبل ڈیولپمنٹ سیمینار کا انعقاد بھی کرے گا۔

نیشنل انرجی ایڈمنسٹریشن، ہائنان ڈیولپمنٹ اینڈ ریفارم کمیشن، اور سانیا میونسپل پیپلز گورنمنٹ ایس ای آئی ایف کو حقیقت کا روپ دینے کے لیے مکمل مدد دے چکے ہیں۔ یہ عظیم تقریب مشترکہ طور پر چائنا ایسوسی ایشن پالیسی سائنس، چائنا پٹرولیم اینڈ کیمیکل انڈسٹری فیڈریشن اور چانگ فینگ انرجی انکارپوریٹڈ کی جانب سے منظم اور سانیا چانگ فینگ انٹرنیشنل انرجی فورم کمپنی لمیٹڈ، دی گوئنگ گلوبل کنفیڈریشن اور سی پی سی آئی ایف دی کمیٹی آف ملٹی نیشنلز کی جانب سے اختیار کی گئی ہے۔

ذریعہ: چانگ فینگ انرجی انکارپوریٹڈ

‫16 ویں ایشین میراتھون چیمپیئن شپس کا چین کے ڈونگ گوان میں آغاز

ڈونگ گوان، چین، 27 نومبر 2017ء/سن ہوا-ایشیانیٹ/–

26 نومبر کو 16 ویں ایشین میراتھون چیمپیئن شپس اور ڈونگ گوان انٹرنیشنل میراتھون 2017ء ڈونگ گوان، چین میں شروع ہوئی۔ اس دوڑ میلے نے 18 ممالک اور خطوں سے تعلق رکھنے والے 40 پروفیشنل ایتھلیٹس اور 30,000 دوڑنے والوں کی توجہ اپنی جانب مبذول کروائی۔ بھارت کے گوپی تھوناکل اور شمالی کوریا کی کم ہائی گیونگ نے بالترتیب مردوں اور عورتوں کی میراتھون چیمپیئن شپس جیتیں۔ چیمپیئن شپس کی میزبانی کرکے ڈونگ گوان کو ایک متحرک اور دلکش شہر کی حیثیت سے دنیا کی توجہ حاصل کرنے کا موقع ملا۔

26 نومبر کی صبح 7:30 پر ڈاکٹر طالب ف الساء، نائب صدر ایشین ایتھلیٹس ایسوسی ایشن (اے اے اے)، مارس آر نکولس، سیکریٹری جنرل اے اے اے اور لو یی شینگ، سیکریٹری ڈونگ گوان میونسپل پارٹی کمیٹی کی جانب سے شاٹ کے ساتھ ہی مقابلے کا آغاز ہوا۔ یہ مقابلہ چار حصوں پر مشتمل تھا، جن میں فل میراتھون (42.195 کلومیٹر)، ہاف میراتھون (21.0975 کلومیٹر)، منی میراتھون (5.2 کلومیٹر) اور کارنیول جوائے رن (2.6 کلومیٹر) پر مشتمل تھا۔

یہ بات تسلیم شدہ ہے کہ ایشین میراتھون چیمپیئن شپس ایشیا میں میراتھون روڈ رننگ میں سب سے اعلیٰ سطح کے بین الاقوامی مقابلے کی نمائندگی کرتی ہیں۔ ڈونگ گوان تیسرا چینی شہر ہے جو بیجنگ اور ہانگ کانگ کے بعد اس مقابلے کی میزبانی کر رہا ہے۔ یہ کھیل سب کے لیے کی طرف داری کرنے والے کی حیثیت سے اپنی شہرت کو صحیح ثابت کر رہا ہے، جس کے ساتھ ساتھ یہ انٹیلی جنٹ مینوفیکچرنگ اور تاریخی ثقافت کے لیے بھی عالمی سطح پر جانا مانا شہر ہے۔ شہری ترقی کے راستے پر گامزن ڈونگ گوان سبز ترقی کے وژن کو طویل عرصے سے نافذ کیے ہوئے ہے۔ شہری ماحول کو بہتر بنانے میں کامیابیوں اور بہتر سافٹ پاور نے مقامی افراد کو حقیقی ثمرات سمیٹنے کا موقع دیا ہے۔ بہت سے دیگر اہم بین الاقوامی کھیلوں کے مواقع کی میزبانی کے پیچھے ایسی ہی وجوہات ہیں۔

2019ء میں ایشین میراتھون چیمپیئن شپس ایک مرتبہ پھر ڈونگ گوان میں ہوگی، جو دنیا بھر سے مشہور دوڑنے والوں کو بلائے گا۔ اور شہر اسی سال شریک میزبان کی حیثیت سے فیبا باسکٹ بال ورلڈ کپ کی میزبانی بھی کرے گا۔ “بڑی تقریبات ایک شہر کو مضبوط کرتی ہیں” کے خیال کو تسلیم کرتے ہوئے ڈونگ گوان 2015ء سے بی ڈبلیو ایف سڈرمین کپ، 2016ء سونگ شان لیک انٹرنیشنل میراتھون اور اب 16 ویں ایشین میراتھون چیمپیئن شپس اور ڈونگ گوان انٹرنیشنل میراتھون کی میزبانی کر چکا ہے۔ یہ عظیم تقریبات ڈونگ گوان کو ایک متحرک اور مسحور کن شہر بنانا جاری رکھیں گی جو ایک فخریہ کھیلوں کو چاہنے والی عوام رکھتا ہے۔

ذریعہ: انتظامی کمیٹی برائے 16 ویں ایشین میراتھون چیمپیئن شپس

سیاؤشان، چین: ایک ابھرتی ہوئی کاؤنٹی معیشت سے بین الاقوامی شہری ضلع تک

ہانگچو، چین، 22 نومبر 2017ء/پی آرنیوزوائر/–

18 نومبر 2017ء کو مشرقی چین کے سب سے زیادہ ترقی یافتہ شہری اضلاع میں سے ایک ہانگچو شہر کے سیاؤشان ضلع میں ایک خصوصی “خاندانی اجتماع” ہوا۔ 800 سیاؤشان افراد، جو ملک اور دنیا بھر میں مختلف شعبہ جات کی ممتاز شخصیات ہیں، پہلی بار سیاؤشان ضلعی حکومت کے مطالبے پر دوبارہ ملاپ کے لیے گھر واپس آئے۔

تقریباً 40 سال کی ترقی کے بعد سیاؤشان، جو کاروباری منتظمین اور اصلاح پسندوں کے شہر کے طور پر معروف ہے، چین میں ٹاؤن شپ معیشت کی مستحکم کارکردگی کے ساتھ ایک معروف کاؤنٹی معیشت سے آج ایک روایتی بین الاقوامی شہری ضلع میں تبدیل ہو چکا ہے۔

سیاؤشان چین کے دریائے چیانتانگ کے جنوبی کنارے پر واقع ہے۔ یہ جدید ضلع جی20 ہانگچو اجلاس کے مرکزی مقام کا میزبان ہے۔ یہ اپنی اقتصادی ترقی کی وجہ سے معروف ہے اور بارہا چین میں سرمایہ کاری کے لیے بہترین مقام قرار دیا جا چکا ہے۔ اصلاحات اور چین کے کھلنے کے بعد سے سیاؤشان کے افراد نے چین کی نجی معیشت کو پروان چڑھانے میں ایک معجزہ تخلیق کیا۔

لو گوانچیو، جو حال ہی میں وفات پا گئے ہیں، سیاؤشان سے تھے۔ انہیں چین کے نجی ملکیت کے اداروں کا “گاڈفادر” مانا جاتا ہے۔ 1970ء کی دہائی کے اوائل میں انہوں نے وانگ سیانگ گروپ کی بنیاد رکھی اور چین میں پہلا او ای ایم بنایا جس نے جنرل موٹرز گاڑیوں کے پرزہ جات اور جزو فراہم کیے۔ اس کے امریکی ماتحت ادارے نے 26 امریکی ریاستوں میں درجنوں کاروبار کھولے اور امریکا میں 8,000 سے زیادہ ملازمتیں تخلیق کیں۔ ریاست الینوائے نے ریاست کے لیے چینی ادارے کے حصے کو تسلیم کرتے ہوئے ہر سال 12 اگست کو “وانگ سیانگ دن” قرار دیا ہے۔

1986ء میں کیمیکل کمپنی کے طور پر قیام سے چوان ہوا گروپ ایک معروف اور متنوع جدید نجی ادارے میں تشکیل ہونا شروع ہوا۔

حالیہ سالوں میں سیاؤشان، چین کا “اقتصادی پہلوان”، “شہر کی تبدیلی کے ذریعے ایک آل راؤنڈ معیشت اور سماجی تبدیلی کو تحریک دینے” کے مشن کو سہارا دے رہا ہے۔

مقامی حکومت اس حقیقت کا ادراک کرتی ہے کہ جدت طرازی ترقی کا نمبر ایک محرّک ہے۔

سیاؤشان اکنامک اینڈ ٹیکنالوجیکل ڈیولپمنٹ زون میں واقع ہانگچو بے انفارمیشن پورٹ سیاؤشان میں انٹرنیٹ صنعت کے لیے ایک اہم “انکیوبیشن” پلیٹ فارم ہے۔ یہاں چین کے 30 سے زیادہ معروف انٹرنیٹ ادارے جمع ہوئے اور یہ سیاؤشان کے لیے ایک اہم محرک بن چکا ہے کہ ایک ساخت گری کے علاقے کو انفارمیشن معاشی علاقے میں آگے کی جانب اہم قدم اٹھائے۔

اس وقت سیاؤشان کی نئی صنعتی تشکیل، جس میں انٹیلی جینٹ مینوفیکچرنگ مرکزی حیثیت رکھتی ہے، صورت گری کررہی ہے۔ چین کا پہلا بگ ڈیٹاالائنس اور پہلی صنعتی بگ ڈیٹا لیبارٹری سیاؤشان میں قائم ہوئی۔ علی بابا اور نیٹ ایز جیسے انٹرنیٹ کے عظیم ادارے، ساتھ ساتھ معروف اے آئی اداروں نے بھی یہاں قیام کا انتخاب کیا۔

جی20 ہانگچو اجلاس کا مرکزی مقام سیاؤشان میں واقع ہانگچو انٹرنیشنل ایکسپو سینٹر ہے۔ جس علاقے میں یہ واقع ہے — اولمپک اسپورٹس ایکسپو سٹی 2022ء ہانگچو ایشین گیمز کی بھی میزبانی کرے گا۔

اعداد و شمار کے مطابق 25 ستمبر 2016ء سے جب یہ مرکز کھولا گیا، یہ 1,800 سے زیادہ کانفرنسوں اور 37 نمائشوں کی میزبانی کرچکا ہے جس کا کل نمائشی رقبہ 3.5 ملین مربع میٹر سے زیادہ ہے۔ اس کا جی20 اجلاس ایکسپیریئنس ہال کا ایک ملین مرتبہ دورہ کیا جاچکا ہے۔

بین الاقوامی کانفرنس منتظمین کی جانب سےسراہے گئے ہانگچو انٹرنیشنل ایکسپو سینٹر نے 2017ء میں آئی سی سی اے (انٹرنیشنل کانگریس اینڈ کنونشن ایسوسی ایشن) میں کامیابی سے شمولیت اختیار کی اور یو آئی اے (یونین آف انٹرنیشنل ایسوسی ایشن) کا چین سے واحد رکن بنا۔ مستقبل میں مزید بین الاقوامی میلے، کانفرنسیں اور ثقافتی تقریبات ہوں گی۔

یہ امر مسلّمہ ہے کہ سیاؤشان چین کے سب سے زیادہ متحرک نمائشی شہر اور کنونشن اور نمائش کے لیے دنیا کے معروف مقام میں تبدیل ہوگا۔ اندازہ ہے کہ 2019ء تک کل نمائشی آمدنی 15 ارب یوآن (2.3 ارب امریکی ڈالرز) تک پہنچے گی اور 1,000 سے زیادہ نمائشیں ہوں گی۔ پیشن گوئی کی جا سکتی ہے کہ سیاؤشان اس طرح ایک نئی صنعت کو بنائے گا – اعلیٰ ترین نمائش۔

جی20 ہانگچو اجلاس کے بعد سیاؤشان ہانگچو کو دنیا سے منسلک کرنے والا اہم شہری ضلع بن چکا ہے۔ مستقبل میں یہ ضلع کنونشن اور نمائش کی صنعت کو پوری قوت سے تعمیر کرے گا اور تمام تر کوششیں “ایگزی بیشن+” کے تصور پر مبنی چین کے بین الاقوامی شہر کی تعمیر کے لیے کی جائے گی۔